ghee banned

پنجاب فوڈ اتھارٹی نے 50 تیل اور گھی کی مصنوعات پر پابندی لگا دی


پنجاب فوڈ اتھارٹی  (پی ایف اے) فعال طور پر بعض دودھ برانڈز کے خلاف سپریم کورٹ کے حکم کے بعد روزمرہ استعمال کی غذائی اشیاء کی نگرانی کی گئی ہے. مارچ میں پی سی ایس آئ آر(PCSIR)، اتھارٹی نے 120 کمپنیوں سے 142 تیل، گھی اوربناسپتی مصنوعات کے نمونے لئے اور انکی سائنسی اور صنعتی تحقیق کے لئے پاکستان کونسل کے مختلف معیار کے تحت نمونوں کی جانچ کی، جس کے نتائج کو اب عوامی طور پر نافذ کیا جا چکا ہے.

کل 142 مصنوعات میں سے 92 پاس ہوئیں اور 26 ناکام رہی جبکہ 24 کو غذائی اعتبار سے صحت کے لئے خطرناک قرار دیا گیا

پی ایف اے نے عوام سے درخواست کی ہے کے جومصنوعات ٹیسٹ میں ناکام رہی ہیں انکو کو استعمال میں لانے سے اجتناب کریں. مارکیٹ حکام کو کہا گیا ہے کے جو مصنوعات ناکام رہی ہیں انکو دور کریں. وہ کمپنیاں، جس کی مصنوعات ٹیسٹ میں ناکام ہیں، ان پر دس لاکھ روپے جرمانہ عائد کیا گیا ہے. ان کمپنیوں جس نے غذائی معیارات کو پورا نہیں کیا ایک ماہ کے اندر اندر ان کی مصنوعات کے معیار کو بہتر بنانے کے لیے کہا گیا ہے. وقت کی حد ختم ہوجانے کے بعد، ان کی مصنوعات کے نمونے دوبارہ ٹیسٹ کیے جائیں گے.

نقصان دہ مصنوعات:

پی سی ایس آئ آر(PCSIR) کی رپورٹ کے مطابق مندرجہ ذیل کھانا پکانے کے تیل، بناسپتی اور گھی کی مصنوعات صحت کے لئے نقصان دہ تصور کیا گیا ہے اور فوری طور پر ان کا استعمال ترک کر دینے کا حکم دیا ہے

ذائقہ بناسپتی
ایویان فلاور آئل
مجاہد بناسپتی
کسان سن فلاور آئل
کوثر بناسپتی
گاۓ بناسپتی
سویرا بناسپتی
سیزن بناسپتی
کمانڈر بناسپتی
سلطان بناسپتی
سلوی بناسپتی
شہتاج بناسپتی
سحر بناسپتی
سحر کوکنگ آئل
امبر بناسپتی
پیور آئل پریمئر بناسپتی
یادگار بناسپتی
درجہ اول بناسپتی
درجہ اول کوکنگ آئل
آسیہ بناسپتی
شہباز بناسپتی
کیئر بناسپتی
لطیف بناسپتی
حفیظ بناسپتی
تازہ بناسپتی
دوا بناسپتی

سیمپلنگ اور جانچ کے عمل:

پی ایف اے نے اعلان کیا ہے کہ کھانا پکانے کے تیل اورگھی ہر سال کم از کم دو مرتبہ معیار کی جانچ کی جائے گی. اس ٹیسٹ کا پہلے سے اعلان کیا جائے گا جبکہ ایک سرپرائز ٹیسٹ بھی منعقد کیا جائے گا. ٹیسٹ کے دوران، نمونہ کمپنی کے نمائندے کی موجودگی میں حاصل کیا جائے گا.

(PCSIR)نمونے، (ISO)ایک  بین الاقوامی معیار کی لیبارٹری ہے جس کے ذریعے ٹیسٹ کر رہے ہیں. حکام اس پارٹی کے خلاف کاروائی کریں گے جو پی ایف اے کے قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی کرے گا.

img-20170601-wa0019_720