wise-doctor-writter-bedlame

پا گل خانےمیں ملا ایک عقلمندمصنف


ایک دفعہ کا ذکرہےکہ قریبی ہسپتال میں ایک نیا ڈاکٹر پاگل خانے کا دورہ کررہاتھا.اس نےوہاں بہت زیادہ پاگل دیکھے.ان میں سے ایک شخص خاموشی سے بیٹھاتھا، جبکہ باقی پاگل اُوٹ پٹانگ حرکتیں کررہےتھے.ڈاکٹرکافی دیرکھڑاُاسے دیکھتا رہا کہ وہ بالکل خاموش ہے.
ڈاکٹراسکے پاس گیا اوراس سےکہا!کہ تم تومجھےپاگل نہیں لگتے.
اس شخص نے کہا!"آپ ٹھیک کہ رہےہیں انہوں نےمجھےزبردستی قیدکررکھاہے.میں تومصنف ہوں.میں نےدوسوصفہات پر مشتمل ایک کتاب لکھی ہے.آپ ہی مجھےبتائے،کہ ایک آدمی جودوسوصفہات کی کتاب لکھےوہ بھلاکیسےپاگل ہوسکتا ہے؟
ڈاکٹرنےکہا!توآپ مصنف ہیں، ذرامجھےاپنی کتاب تودیکھائیں.
اس شخص نے فوراایک کتاب ڈاکٹرکودی.جسکے پہلے صفہےپر سوال لکھا ہوا تھا.
"جب گھوڑا دوڑتا ہےتوکیسی آوازپیدا ہوتی ہے؟."
اس لائن کےنیچےسےلےکرآخری صفہہ نمبردوسوتک یہ لکھا ہوا تھا.
"ٹھکاٹھک، ٹھکاٹھک…"
تو ڈاکٹرنے کہا! شراب بنی تو میخانے بنے
حسن بناتو دیوانےبنے
کوئی توبات ہےآپ میں
یونہی تونہیں پاگل خانےبنے.


جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے

Copy Protected by Chetan's WP-Copyprotect.